umarshakir.com

آگاہی ہی .......زندگی ہے

چوک اعظم کی کرائم ڈائری

چوک اعظم کی کرائم ڈائری

ترتیب محمد عمر شاکر
03463710663
03136522265

Mini Yadgar Chowk Azam

تخلیق انسانیت سے ہی خیر و شر کے درمیان پڑنے والی تفریق روز قیامت تک جاری رہنی ہے شیطان بلاشبہ انسانی جسم میں خون کی طرح دوڑتا ہے اور حضرت انسان کو عارضی فائدہ دکھا کر گمراہ کرنے کی بھرپور کوشش کرتا ہے مگر انسانی شاہ رگ سے بھی قریب اور اپنے بندے کی دل میں خفیہ یا اعلانیہ پکار سننے والے خالق کائنات کے بندے کسی بھی شیطانی بہکاوے میں نہیں آتے اور استقامت سے رب کائنات کی عبادت کرتے ہیں معاشرے کی تین اکائیاں ہیں جن میں سے اگر دو باہم مل جائیں تو تیسری اکائی کے لئے مشکلات کا سامنا ہو جاتا ہے

تین اکائیاں عوام پولیس اور جرائم پیشہ عناصر ہیں عوام اور جرائم پیشہ عناصر باہم مل جائیں تو پولیس سمیت قانون نافذ کرنے والے اداروں کے لئے مشکلات پیدا ہو جاتی ہیں اسی طرح اگر پولیس اور جرائم پیشہ عناصر مل جائیں تو عوام الناس کے لئے مشکلات پیدا ہو جاتی ہیں جبکہ اگر پولیس اور عوام مل جائیں تو کریمینل جرائم پیشہ عناصر کے لئے مسائل پیدا ہو جاتے ہیں تھنہ چوک اعظم سے حال ہی میں ٹرانسفر ہونےوالے ایس ایچ او وسیم اکبر لغاری نے جب چوک اعظم میں 4;47;4;47;2017کو چارج سنبھالا تو چوک اعظم سمیت ضلع بھر میں تاجروں سے اسلحہ کے زور پر کیش لوٹنے والا گروہ پولیس کارگردگی پر سوالیہ نشان جبکہ عوام الناس کے لئے خوف کی علامت بنا ہوا تھا

وسیم اکبر لغاری نے گرتے ہوئے پولیس مورال کو بلند کرنے کے لئے شبانہ روز محنت کر کے ڈکیت کو سر گنا سمیت گرفتار کرتے ہوئے لوٹی ہوئی رقم اور ڈکیتی کی وار دات میں استعمال ہونےوالے اسلحہ اور موٹر سائیکل کو بھی بر آمد کیا ڈکیت گروہ کی گرفتاری کے بعد ماضی کے برعکس پہلی دفعہ ڈکیتی کا مال سابق ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر لیہ محمد علی ضیاء نے چوک اعظم میں منعقدہ ایک تقریب میں تاجروں کے حوالے کیا چوک اعظم کی مختلف وارڈز میں منشیات فروشی کا دھندہ عروج پر تھا منشیات فروش طویل عرصہ سے بچوں اور عورتوں کے ذریعہ منشیات فروشی کر رہے تھے جنوبی پنجاب میں چوک اعظم سے منشیات فروشی کی کہانیاں زبان زد عام تھیں انٹی نار کو ٹکس میانوالی سمیت مختلف اداروں نے آپریشن کیے

مگر منشیات فروش ہمیشہ بچوں اور عورتوں کے سبب بچ جاتے تھے وسیم اکبرلغاری نے اس سلسلہ میں جدید ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہوئے منشیات فروشوں کے محلہ میں عوامی اعتماد بڑھاتے ہوئے منشیات فروش خواتین سمیت انکے سر پرستی کرنے والے عناصر کے خلاف مقدمات درج کرتے ہوئے بلا امتیاز کاروائی کی تو چوک اعظم سمیت نواحی چکوک میں منشیات فروشی کا دھندہ منفی ہوگیا وسیم اکبر لغاری نے مقامی چوہدریوں اور سرداروں کے ڈیرے آباد کرنے کی بجائے چوک اعظم تھانے میں زیادہ سے زیادہ ٹائم دینے کو فوقیت دی جس کے سبب عام سائل کی بات تک سے واقف ہوئے اور بلا تعطل مظلوم کی داد رسی کے لئے کوشاں رہے وسیم اکبر لغاری کا چوک اعظم سے مدت ملازمت مکمل ہونے کے سبب 3 مئی 2018ء کو ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر لیہ ناصر مختار راجپوت نے تھانہ سٹی لیہ تبادلہ کر دیا

مگر وسیم اکبر لغاری نے اپنی تعیناتی کے دور میں جیسے اپنی پولیس فورس کو ساتھ ملاکر عوامی اعتماد کیساتھ جرائم پیشہ عناصر کے خلاف کاروائیاں کیں وہ لائق صد تحسین ہیں اس دوران گزشتہ کئی سالوں سے اے کیٹگری کے دس سے زائد جبکہ بی کٹیگری کے سو سے زائد اشتہاری ملزمان گرفتار کیے اس دوران کل 509مقدمات درج ہوئے جبکہ چھیاسٹھ لاکھ تراسی ہزار آٹھ سو بتیس روپے کی بر آمدگی ہوئی جوا کے دو مقدمات درج اسلحہ کے تئیس مقدمات درج جبکہ منشیات کے اٹھاون مقدمات درج اسی طرح چار گینگ گرفتار ہوئے جن اٹھارہ لاکھ سے زائد رقم بر آمد کی گئی اسی طرح طالبات کو ملازمتوں کے خواب دکھا کر جنسی طور پر ویڈیو بنا کر ہراساں کرنے والے گینگ کو گرفتار کیا گیا

چوک اعظم کے نواحی گاوں میں توہین رسالت کے مرتکب ملزم کو ڈی ایس پی سرکل چوبارہ سعادت علی چوہان اور ایس ایچ او وسیم اکبر لغاری نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے ملزم کو بہاولپور کے نواحی علاقہ سے گرفتار کر لیا توہین رسالت کے مرتکب ملزم کی گرفتاری پر مذہبی حلقوں کی جانب سے زبردست انداز میں خراج تحسین پیش کیا گیا ٹرانسفر ترقی یا تنزلی ملازمت کا حصہ ہوتے ہیں مگر کسی بھی آفیسر کا عوامی مفادات کے لئے ہمہ وقت تیار رہتے ہوئے عوام الناس کے بلا امتیاز فلاح کے لئے اجتماعی فلاحی کام کر جانا جہاں ریاست وہیں ادارے کی بھی نیک نامی کا سبب بنتا ہے

وسیم اکبر لغاری کو جہاں اہلیان چوک اعظم طویل دورانیہ تک یاد رکھیں گئے وہیں انکے بعد تعینات ہونے والے ایس ایچ او اشرف ماکلی کو بھی عوامی حلقوں کو ساتھ لیکر چلنا ہو گا چوک اعظم میں منشیات فروش دوبارہ قدم نہ جما سکیں اور کریمینل افراد یا گروہوں کے لئے چوک اعطم اور گردونواح کی زمین تنگ ہی رہے پولیس اور عوام کا تعاون مثالی رہے بلاشبہ پولیس اور عوام کے تعاون اور ایکدوسرے پر اعتماد سے ہی کریمنیل افراد گروہوں اور انکے سر پرستوں کی سر کوبی ممکن ہے

1 thought on “چوک اعظم کی کرائم ڈائری”

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top